Wednesday, April 17, 2024
HomeشاعریChai Poetry In Urdu

Chai Poetry In Urdu

Chai poetry in Urdu چائے پر شاعری is not just a form of artistic expression; it is a cultural heritage that has been preserving the art of tea and verse for centuries. The historical background of chai poetry reveals its deep roots in Urdu literature, with poets using this medium to convey their emotions, thoughts, and experiences.

Tea holds a significant place in Urdu poetry, serving as a powerful symbol that conveys a range of emotions, experiences, and social interactions. Through its symbolism, tea becomes a metaphorical vehicle for expressing various aspects of life and human relationships.

In Aesthetic Urdu poetry, tea is often used to represent comfort, solace, and warmth. Just as a cup of tea provides physical warmth, it also symbolizes emotional warmth and a sense of belonging. The act of sipping tea becomes a metaphor for finding solace and tranquility amidst the chaos of life. This symbolism is particularly evident in the ghazal genre of Urdu poetry, where poets often compare the soothing effect of tea to the comfort of a lover’s presence.

Furthermore, tea is frequently employed to depict the bittersweet experiences of love and longing. The bitterness of tea leaves is reminiscent of the pain and heartache that often accompany romantic relationships. Poets use tea as a symbol to express the complex emotions associated with love, such as desire, yearning, and the pangs of separation. The act of drinking tea becomes a metaphorical expression of consuming these emotions, as if the poet is trying to find solace in the bitterness of their own experiences.

In addition to its emotional symbolism, tea also serves as a catalyst for social interactions in Urdu poetry. Tea houses, known as “chai khanas,” are depicted as gathering places where people from different walks of life come together to share stories, engage in intellectual discussions, and forge connections. The act of sharing a cup of tea becomes a symbol of camaraderie, hospitality, and the breaking of barriers between individuals. Through tea, poets highlight the importance of human connection and the power of conversation in fostering understanding and unity.

Great Collection of Chai Poetry In Urdu چائے پر شاعری

Dil ko Behlane k Liye Kuch to Chahiye
Chah na sahi to Chaye hi Sahi

دِل کو بہلانے کے لیے کچھ تو چاہیے
چاہ نا سہی تو چائے ہی سہی

Dil ko Behlane k Liye Kuch to Chahiye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Hum Dil karne par nahin

Mood banne par peete hain Chaye

ہم دِل کرنے پر نہیں

موڈ بننے پر پیتے ہیں چائے

Hum Dil karne par nahin

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Thandi Chaye, Udaas Shaamain, Tumhari Yaad

ٹھنڈی چائے ، اداس شامیں ، تمہاری یاد

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Pucha Gaya Mohabbat Ya Chaye, Maine Kaha.

Mohabbat Ke Hath Ki Chaye

پوچھا گیا محبّت یا چائے, میں نے کہا

محبّت کے ہاتھ کی چائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Kabhi hum bhi saath beth kar Chaye Peeyen Ge

کبھی ہم بھی ساتھ بیٹھ کر چائے پئیں گے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Faqeero ki tabiyat bhi bari ghani hoti hai

Beth jate hain wahan jahan chaye bani hoti hai

فقیروں کی طبیعت بھی بڑی غنی ہوتی ہے
بیٹھ جاتے ہیں وہاں جہاں چائے بنی ہوتی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ 

Dil cheez hai kya

Ap hamari chaye lijiye

دِل چیز ہے کیا
آپ ہماری چائے لیجیے
 

Ye waba ke din guzar jayen ge to phir

Ek mulaqat rakhen ge…chaye pe

یہ وبا كے دن گزر جائیں گے تو پِھر
اک ملاقات رکھیں گے . . . چائے پہ

Na chaye na khatai puchte hain

Aj kal log pehly kamayi puchte hain

نا چائے نا کھٹائی پوچھتے ہیں
آج کل لوگ پہلے کمائی پوچھتے ہیں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Ankhain majnu hon to

Chaye bhi laila lagti hai

آنکھیں مجنوں ہوں تو
چائے بھی لیلی لگتی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Chaye ke ek cup par takrar rehne dijiye

Pee lijiye ya baant dijiye,Inkar rehne dijiye

چائے كے اک کپ پر تکرار رہنے دیجیئے
پی لیجیے یا بانٹ دیجیئے ، انکار رہنے دیجیئے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ 

Allah aisi beemari se bachaye

Jis mein tabeeb chaye se parhaiz btae

اللہ ایسی بیماری سے بچائے
جس میں طبیب چائے سے پرہیز بتائیں

Mera hath tham kar wahan le chalo

Jidhar chaye ki nadiya behti hon

میرا ہاتھ تھم کر وہاں لے چلو
جدھر چائے کی ندیا بہتی ہوں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Chand taare bohat mushkil hain

Main to ek cup chaye se maan jaun gi

چند تارے بہت مشکل ہیں . . .
میں تو اک کپ چائے سے مان جاؤں گی

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Hmara koi nahin hai ek zamane se

Hume pta ye chala door ho ke chaye khaane sy

ہمارا کوئی نہیں ہے اک زمانے سے
ہمیں پتہ یہ چلا دور ہو كے چائے کھانے سے

Jis din chaye mein cheeni kam hui

Us din tere honto ki khair nahin jaanaan

جس دن چائے میں چینی کم ہوئی
اس دن تیرے ہونٹوں کی خیر نہیں جاناں

Ek chaye do cup mein baant kar

Aksar kiya hai farz ke tanha nahin hoon main

اک چائے دو کپ میں بانٹ کر
اکثر کیا ہے فرض كے تنہا نہیں ہوں میں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Barh jati hai kuch aur hi chaye ki mithaas

Pehla ghoont jo tere naam ka pee lete hain

بڑھ جاتی ہے کچھ اور ہی چائے کی مٹھاس
پہلا گھونٹ جو تیرے نام کا پی لیتے ہیں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

سوچتا ہوں بنا ہی ڈالوں

ایک فرقہ ، چائے پینے والوں کا

Sochta Hon Bana Hi Dalon Aik Firqa,

Chai Peeny Walon Ka

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

لوﮒ ﭘﻮﭼﮫ ﺭﮨﮯ ﺗﮭﮯ ﮐﺎﻣﯿﺎﺑﯽ ﮐﺎ ﺭﺍﺯ

ﭼﺎﺋﮯ ﮐﺎ ﮐﭗ ﺍﭨﮭﺎ ﮐﮯ ﺩﮐﮭﺎﻧﺎ ﭘﮍﺍ ﻣﺠﮭﮯ

Log Poch Rahay Thay Kamyabi Ka Raaz

Chai Ka Cup Utha Kay Dikhana Para Mujhy

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تم  کیا  جانو  گاؤں  کے  ذائقوں  کے سکھ

تم نے کبھی پی ہے جلتی لکڑی پر بنی چائے؟

Tum Kia Jano Gaon Ka Zaiqon Ka Sukh

Tum Nay Kabhi Pee Ha Jalti Lakri Par Bani Chai?

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

خواب میں کئی بار تمہیں

اپنے لیے چائے لاتے دیکھا ہے

Khaab Main Kai Bar Tumhain

Apny Liye Chai Latay Daikha Hai

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ہم گرمیوں میں چائے نہیں چھوڑتے

تمہیں  کہاں  چھوڑیں   گے؟

Hum Garmion Main Chai Nahi Chorty

Tumhain Kahan Chorain Ga?

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Deep Tea Poetry In Urdu

لوگوں کو”عِشق” کی “ع” نے لُوٹا ہوگا

ہمیں تو”چائے”کی”چاہ” نے ہی مار ڈالا

Logon Ko Ishq Ki Ain Nay Loota Ho Ga

Hamain To Chai Ki Chah Nay Hi Maar Dala

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

آج پھر خیالوں میں آن بسے ہو تم

آج پھر شام کی چائے تمھارے نام

Aj Phir Khayalon Main Aan Basay Ho Tum

Aj Phir Shaam Ki Chai Tumharay Naam

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

عمر کہتی ہے کہ اب سنجیدہ ہوا جائے

دل کہتا ہے بس ایک کپ اور چائے

Umer Kehti Hai Keh Ab Sanjeeda Howa Jaye

Dil Kehta Hai Bus Aik Cup Aur Chai

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ﭘﮭﻮﻝ ﭼﺎئے ﮐﯽ ﭘﯿﺎﻟﯽ ﻣﯿﮟ ﺭﮐﮫ ﮐﺮ

آج اس نے محبت کا اقرار بھیجا ہے

Phool Chai Ki Piyali Main Rakh Kar

Aj Us Nay Mohabbat Ka Iqrar Bhaija Hai

ﭘﮭﺮ ﮐﮩﯿﮟ ﺑﯿﭩﮫ ﮐﮯ ﭘﯽ ﺟﺎئے ﺍکٹھے ﭼﺎئے

ﭘﮭﺮ ﮐﻮئی ﺷﺎﻡ ﮐﺎ ﭘﻞ ﺳﺎﺗﮫ ﮔﺰﺍﺭﺍ ﺟﺎئے

Phir Kahin Baith Ka Pee Jaye Akathay Chai

Phir Koi Sham Ka Pal Sath Guzara Jaye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے، چاہت، دنیاداری

ہم نے تینوں خوب نبھائے

Chai, Chahat, Dunya Daari

Hum Nay Tenu Khoob Nibhaye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چاہ نہ سہی تو چائے ہی سہی

Dil Ko Behlanay Ko Kuch To Chahye

Chah Na Sahi To Chai Hi Sahi

ہم تلخیوں سے بھرے سر پھرے لوگ

چائے نہ  پیئیں  گے تو مر جائیں گے

Hum Talkhyon Say Bharay Sar Phiray Log

Chai Na Piyain Gay To Mar Jayain Gay

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

نہیں ہے کوئی بھی امید تیرے آنے کی 

میں اور چائے کو کتنا  اُبال  سکتا ہوں؟

Nahi Hai Koi Bhi Umeed Teray Anay Ki

Main Aur Chai Ko Kitna Ubaal Sakta Hon

جن پر  تعویز  بھی اثر  نہیں  کرتا  ناں 

ان کو ہمارے ہاتھ کی چائے پِلا کر دیکھیے

Jin Par Taviz Bhi Asar Nahi Karta Hain Na

Unko Hamary Hath Ki Chai Pila Kar Daikhye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تجھ سے گفتگو کرنے والے

  چائے پھیکی پیتے ہوں گے

Tujh Say Guftgu Karny Walay

Chai Pheeki Peetay Hon Gay

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے کو فقط چائے مت جانئیے

یہ  تو لہجہ ہے اہلِ محبت کا

Chai Ko Faqat Chai Mat Janiye

Yeh To Lehja Hai Ehl e Mohabbat Ka

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

اِک چائے کو دو کپوں میں برابر بانٹ کر

اکثر کیا ہے فرض کہ تنہا نہیں ہوں میں

Aik Chai Ko Do Kapoon Main Barabar Bant Kar

Aksar Kia Hai Farz Keh Tanha Nahi Hon Main

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

مُرشد نے کہا چائے چھوڑ دو

ہم  نے مُرشد ہی چھوڑ دیا

Murshid Nay Kaha Chai Chor Do

Hum Nay Murshid Hi Chor Diya

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

آگ لگے اس کی یادوں کو

آج پھر چائے ٹھنڈی کر دی

Aag Lagay Uski Yadoon Ko

Aj Phir Chai Thandi Kardi

چائے اور چاہت ایک جیسے ہوتے ہیں

ملیں تو سکون نہ ملیں تو  بیقراری

Chai Aur Chahat Aik Jaisy Hoty Hain

Milain To Sukoon Na Milain To Beqarari

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

مجھ کو تیری یاد بھی اب نہیں آتی

تنہائی میں اب ساتھ نبھاتی ہے چائے

Mujh Ko Teri Yaad Bhi Ab Nahi Aati

Tanhai Main Ab Sath Nibhati Hai Chai

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ہمیں مطلب ہے بس چائے پینے سے

آپ  بنا  کر جیسی مرضی  لے آئیں

Hamain Matlab Hai Bus Chai Peenay Say

Ap Bana Kar Jaisi Marzi Lay Ayain

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

مجھے پسند ہے

کسی پہاڑ کی چوٹی پر لکڑی سے بنا

 چھوٹا سا گھر

چائے کا کپ ہاتھ میں تھامے

کھڑکی سے برستی بارش دیکھنا

Mujhay Pasand Hai

Kisi Pahar Ki Choti Par Lakri Say Bana

Chota Sa Ghar

Chai Ka Cup Hath Main Thamay

Khirki Say Barasti Barish Daikhna

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

من پسند شخص کی توجہ اور چائے

جتنی بھی مل جائے کم ہی ہوتی ہے

Mann Pasand Shakhs Ki Tawajo Aur Chai

Jitni Bhi Mil Jaye Kam Hi Hoti Hai

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

لوگوں کو چائے کے ساتھ بسکٹ اور کیک پسند ہوتے ہیں

مگر مجھے چائے کے ساتھ صرف “تم” پسند ہو

Logon Ko Chai Ka Sath Biscuit Aur Cake Pasand Hotay Hain..

Magar Mujhay Chai Ka Sath Sirf “Tum”Pasand Ho

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Aik Chai Ko Doh Kappon Mein Barabar Baant Kar,

Akser Kia Hai Farz Ke Tanha Nahi Hun Main

ایک چائے کو دو کپوں میں برابر بانٹ کر 

اکثر کیا ہے فرض کے تنہا نہیں ہوں میں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Jo Tere Saare Khat Jala Kar Banayi,

Haye Uss Chai Ke Kya Kehne

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Sirf Tumhare Hath Ki Chai,

Sar Dard Bhi Ajeeb Zid Liye Betha Hai

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Duniya Jalti Rahay,

Chai Chalti Rahay

دنیا جلتی رہے

چائے چلتی رہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Aankhen Majnu Hon Toh,

Chai Bhi Laila Lagti Hai

آنکھیں مجنوں ہوں تو

چائے بھی لیلٰی لگتی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Dil Ko Behlane Ke Liye Kuch Toh Chaiye,

Chah Na Sahee Toh Chai Hee Sahee

دل کو بہلانے کے لئے کچھ تو چاہیے

چاہ نہ سہی, تو چائے ہی سہی

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Aadhi Raat Aur Gehre Saaye,

Khali Kursi Main Aur Chai

آدھی رات اور گہرے سائے

خالی کرسی، میں اور چاے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Jaan Leva Tha Uska Sanwala Rang,

Aur Hum Karak Chai Ke Shaukeen Bhi Thay

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

Sunte Huye Uski Meethi Baaton Ko,

Main Uski Banayi Huyi Pheeki Chai Pee Gaya

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

طلسمِ مصر ہے اُس کے حسین ہاتھوں میں
جو وُہ بنائے تو چائے کو جام کر دے گا

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تمام سسکیوں کی میں ہائے لایا ہوں
اہل غم بیٹھو میں چائے لایا ہوں ۔۔۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

حضرت ! کبھی تو آئیے درگاہِ عشق میں
چائے بھی پِلائی جائے گی قوالیوں کے ساتھ!

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے پی کر جائیے گا مدتّوں بعد آئے ہو۔
رکھ دیا ہے دھوپ میں پانی ابلنے کے لیئے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

سوچو تو
کیا لمحہ  ہوگا
جب ہوں گے ساتھ
بارش…شاعری ,چائے
تم اور میں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے چائیے ، کون سی جناب
لپٹن عمدہ ہے، ھممم لاجواب

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

پہلی چائے کی چسکی جیسا ہے
کیا بتاؤں وُہ شوخ کیسا ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

بے وَفائی کی خیر ہے لیکن

ہائے ظالم نے چائے نہ پوچھی

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

گھر کی صفائی، کھانا، بچوں کی دیکھ بھال

لڑکی کو چائے لانا مہنگا بہت پڑا

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

وہ  یوں  ہی  اپنی محبّت  کو نیا  موڑ  دیتا  ہے

آدھی چائے پیتا ہے باقی میرے لئے چھوڑ دیتا ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے کا ذائقہ نہیں آتا

کچھ دنوں سے خفا خفا ہے کوئی

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

جانے میں کیا سوچ کے چپ ہوں گم سم ہوں

جانے وہ کیا سوچ کے واپس آئی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

یہ مہمان نوازی ہے یا اور ہے کچھ

میرے لئے وہ چائے بنا کر لائی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تو مجھ سے خفا ہے تو

صرف چائے کے لیے آ

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تمھیں الجھن ہے چائے سے

مجھے پھر بھول جاؤ تم…

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ایک  فتویٰ  ہم  پر  بھی۔۔۔

ہم چائے کو جان کہتے ہیں۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

جب بھی پریشان ھوتا ہوں

چاے کا مہمان ھوتا ہوں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چاۓ کے ساتھ اسکی خوشبو کے ذائقے۔
وہ شام۔۔وہ گھڑی۔بس زندگی تمام۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

‏ایک کپ چائے اور کچھ باتیں

اگر تیرے شہر میں ٹھہرے تو

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

جو چائے کے دیوانے ہوتے ہیں۔۔

وہ لوگ بہت سیانے ہوتے ہیں۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

پی کے چائے جو آجاتی ہے منہ پہ رونق
وہ سمجھتے بیمار کا حال اچھا ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

منتظر ہیں سموسے، چاۓ اور میں

آپ آئیں کہ یہ شام مکمل ہو 

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تمام سسکیوں کی میں ہائے لایا ہوں۔
اہل غم بیٹھو میں چائے  لایا ہوں ۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

‏‎وقت قلیل باتیں طویل شکوےہزار
پر  جانے  دیجئیے  چائے  پیجئے!

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

 مت پوچھ ساقی اُن کے میخانے کا پتہ

اُن کے شہر کی چاۓ بھی نشہ دیتی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تھام کے سر کو اب درد سے نڈھال بیٹھا ہوں
چاۓ کے کپ پر جب سےدل ہار بیٹھا ہوں۔۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے کی قدر کیجئے صاحب۔۔
یہ تمام مشروبات کی مُرشد ہے۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

‏‎‎آدھی رات اور گہرے ساۓ
خالی کرسی ، میں اور چائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

یوں تو بہت انمول تھا وہ

مگر بِک گیا ایک چائے کی پیالی پر

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

منتظر ہیں سموسے، چاۓ اور میں
آپ آئیں کہ یہ شام مکمل ہو

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

شام یو ہیں کٹ گئ انتظار میں
چاے بھی ٹھنڈی ہوگئ انتظار میں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ہم اتنی گرم جوشی سے ملے  تھے
ہماری چائے ٹھنڈی ہوگئی تھی

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

میرے لیے تم بن جاؤ چائے کی مانند
اور میں پیتے پیتے نہ تھکوں تم کو

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

مجھے بیاں کرو ذاٸقے میں۔
اور لکھنا چاۓ جیسی ہوں۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تم کو آتے دیکھا تو نیچے رکھ دی چائے

اور کتنا احترام کروں تمہارا تم ہی بتاؤ

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

وہ فقط  خوبصورت ہی نہیں ہے
وہ   چائے بھی اچھی بنا لیتی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

‏نہیں ہے کوئی بھی امید تیرے آنے کی

میں چائے کو اور کتنا اُبال سکتا ھوں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ﭘﮭﻮﻝ، ﺍﻟﺒﻢ، ﺷﺎﻋﺮﯼ، ﭼﺎﺋﮯ !!
ﺫﺍﺕ ﺑﮑﮭﺮﯼ ﭘﮍﯼ ﮨﮯﮐﻤﺮﮮ ﻣﯿﮟ !!
ایک تنہائی ، دُوسری چا‏‏ئے
شاعری میری تیسری سہیلی ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

لمس کی آنچ پر جذبوں نے اوبالی چائے
عشق پیتا ہے کڑک چاہتوں والی چائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

پرتکلف سی ، مہکتی ، وہ سہانی چائے
اب کہاں ھم کو میّسر ھے تمہاری چائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

مایوس کیوں ہو اس کپ کو دیکھ کر

لوگ تو خون پی جاتے ہے تم چائے پیوں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تم چائے کی طرح محبت تو کرو
میں بسکٹ کی طرح ڈوب نا جاوں تو کہنا۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

اس کے ہاتھوں کی چائے

ہائے بندہ ڈوب کے مر جائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چسکیوں کی بات سسکیوں پہ آگئی

یاد آگیاتھا تیرے ساتھ چائے پینا

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ہاتھ آگے نہیں کیا اس نے
میں نے بھی چاۓ میز پر رکھ دی

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

آو مل کہ بیٹھتے ہیں چائے پہ کہیں
آج اتوار ہے تم کو فرصت ہوگی۔۔

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے کی تعریف کرنے کو جب بھی قافیہ جوڑا ہے
مجھے احساس یہی ہوا ہے کہ میرا  علم تھوڑا ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ایک پھیکی چائے پینی ہے
تمہاری میٹھی باتوں کے ساتھ

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے۔ شاعری۔ اور تم

بھاتے بھی بہت ہو

اور دل کو جلاتے بھی بہت ہو

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

‏پہلی نمبر  پر تنہائی،دوسرے پر چائے
شاعری تو ہماری تیسری محبت ہے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چائے ، شاعری اور اِن سے منسوب
اک شخص اور ھم کچھ نہیں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

دن میں تین دفع یہ کام ضرور کریں
چاۓ پیٸں،چاۓ پیٸں اور چاۓ پیٸں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

یہ چائے کا وقت ہے جناب
محبت پر تبصرے .. !! ہم نہیں کریں گے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

چہرے پر تازگی دل میں موسم بہار رکھنا،
میرے آنے سے پہلے چائےکاکپ تیار رکھنا

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

امُور دل میں کسی تیسرے کا دخل نہیں
یہاں فقط تیری چلتی ھے یا چائے  کی

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ﭼﺎﺋﮯ ﮐﯽ ﺧﻮﺷﺒﻮ پہ کھنچے چلے آئیں گے
وہ لوگ بھی جو آج کل مصروف بہت ہیں

 

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

 

آپ ہمیں چھوڑ نہ سکیں گی
ہم آپ کی چاۓ بن جائیں گے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ڈھیر ساری باتیں ہیں،  ڈھیر سارے شکوے ہیں
چائے پیتا رہتا ہوں، خود سے لڑتا رہتا ہوں

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ 

میرے دالان کا منظر کبھی دیکھو آکر

درد میں ڈوبی ہوئی شام سوالی چائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

عشق بھی رنگ بدل لیتا ہے جانِ واجد

ٹھنڈی ہوجائے تو پڑ جاتی ہے کالی چائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

پرتکلف سی ، مہکتی ، وہ سہانی چائے
اب کہاں ھم کو میّسر ھے تمہاری چائے

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ایک تالاب تھا کچھ پیڑ تھے اور تنہائی
میں جہاں شام ڈھلے جاتی تھی پینے چائے

aik talaab tha kuch pairr thay aur tanhai
mein jahan shaam dhaly jati thi peenay chaye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

اُس کا حق ھے _ ھمیشہ اُسی کا رھے گا

محبت چائے نہیں _ جو سب کو پلا دی جائے

uss ka haq he _ humisha usi ka rahay ga

mohabbat chaye nahi _ jo sab ko pila di jaye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ 

امُور   دل میں کسی تیسرے کا دخل نہیں

یہاں فقط تیری چلتی ھے یا چائے  کی 

amoor e dil mein kisi teesray ka dakhal nahi

yahan faqat teri chalti he ya chaye   ki

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

میں یہی سوچ رہا تھا کہ! اجازت چاہوں

اس نے پھر اپنے ملازم سے منگا لی *چائے

mein yahi soch raha tha ke! ijazat chahoon

is ne phir –apne mulazim se mannga li * chaye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

گاؤں کے خالص گُڑ” جیسی

وہ میٹھی محبت سی لڑکی

gaon ke khalis gur jaisi

woh meethi mohabbat si larki

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ہر گھونٹ کو تیرے ہجر نے کڑواھٹ دی

راس آیا نا ہمیں ساتھ میں چائے پینا

har ghoont ko tairay hijar ne Karwahat di

raas aaya na hamein sath mein chaye piinaa

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

بس طلب چائے کی پیالی ہے
ہم سا بھی کب کوئی سوالی ہے
ایک بس چاہ اور چائے ہے

bas talabb chaye ki piyali hai
hum sa bhi kab koi sawali hai
aik bas chaah aur chaye hai

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

باقی ہر شے تو اب گنوا لی ہے
اس محبت کی اور چائے کی
کب کسی چیز نے جگہ لی ہے

baqi har shai to ab ganwaa li hai
is mohabbat ki aur chaye ki
kab kisi cheez ne jagah li hai

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

بے وفائی یوں کی ہے چائے سے
ایک رکھی تو اک اٹھا لی ہے

be wafai yun ki hai chaye se
aik rakhi to ik utha li hai

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

لاکھ دیکھیں ہیں چائے خانے پر

نہ وہ ساقی نہ وہ پیالی ہے
اپنی ہر پیاس ہم نے تو ابرک
اپنی چائے میں ہی بجھا لی ہے
 

laakh dekhen hain chaye khanaay par
nah woh saqi nah woh piyali hai
apni har pyaas hum ne to abrak
apni chaye mein hi bujha li hai

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

پُرتکلف سی ، مہکتی ، وہ سُہانی چائے
اب کہاں ھم کو میّسر ھے تمہاری چائے

pur takalu si, mahakti, woh SUHAANI chaye
ab kahan hum ko mayassar hai tumhari chaye

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

میں نے چینی کی بھی مقدار بڑھا کر دیکھا

بن ترے لگتی ھے کچھ کڑوی کسیلی چائے

mein ne cheeni ki bhi miqdaar barha kar dekha

ban tre lagti he kuch karvi kasili chaye

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

میں تری یاد میں کھو جاتا ھوں بیٹھے بیٹھے
منہ مرا تکتی ھی رہ جائے ، بیچاری چائے

mein tri yaad mein kho jata hoon baithy baithy
mun mra taktee hi reh jaye, baichari chaye

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

وہ مُجھے بُھول گئی، میں نہیں بُھولا اُسکو

ساتھ رھتی ھے شب و روز خیالی چائے

woh mujhe bhool gayi, mein nahi bhola Usko

sath reheti he shab o roz khayaali chaye

 

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تیرے وعدوں سے بھرےخط بھی دکھانے ھیں تجھے

آج کی شام کو چائے ھے ضروری چائے

tairay wadon se bharay khat bhi dikhaane hain tujhe

aaj ki shaam ko chaye he zaroori chaye

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ایک دن سو کے اُٹھوں میں، توُ مرے سامنے ھو
کاش ہاتھوں میں لئے ایک پیالی چائے

aik din so ke uthuun mein, to marey samnay ho
kash hathon mein liye aik piyali chaye

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

تھام کے ہاتھ کو، لاتی ھے مُجھے پاس ترے
بھاپ اُڑاتی ھوئی ، ٹیبل پہ ، دِوانی چائے

thaam ke haath ko, late hei mujhe paas tre
bhaap aُrhati hui, table pay, dawani chaye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

لمس ہاتھوں کا ترے، نا ھی محبّت کا سُرور

راس آئی نہ کبھی مجھ کو پرائی چائے

 

lams hathon ka tre, na hi mohabbat ka suroor

raas aayi nah kabhi mujh ko parai chaye

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ

ڈال کے کپ میں تقاضائے محبت کا اُبال
یاد آتی ھے مُجھے تیری سوالی چائے

daal ke cupp mein Takazay mohabbat ka ubaal
yaad aati he mujhe teri sawali chaye

ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ 

 ھائے کیسے یہ گری ھے ترے ہاتھوں پہ

جھاڑو  پیٹی سی ، مرن جوگی ، نگوڑی چائے

Haye kaisay yeh giri he tre hathon pay

Jharo paiti si, maran jogi, nigodi chaye

 ــــــــــــــــــــ٭٭٭ــــــــــــــــــ 

Final Words

Chai poetry in Urdu (چائے پر شاعری) is a cultural heritage that not only preserves the art of tea and verse but also serves as a powerful medium of expression. Its significance in Urdu culture, diverse themes and styles, contributions of prominent poets, and the continued popularity of chai poetry چائے شاعری gatherings all contribute to its enduring legacy. Chai poetry in contemporary times demonstrates its ability to adapt and thrive, ensuring that this cherished tradition will continue to inspire and captivate generations to come.

متعلقہ مضامین

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

متعلقہ