Monday, September 25, 2023
ہوماسلامنعت شریفابھی تو لوٹا ہوں انکے در سے

ابھی تو لوٹا ہوں انکے در سے

ابھی تو لوٹا ہوں انکے در سے

Abhi To Lota Hun Unke Dar Se Abhi Se Dil Beqarar Kyun Hai

ابھی تو لوٹا ہوں انکے در سے ابھی سے دل بیقرار کیوں ہے
ابھی تو ہر سو ہیں انکے جلوے ابھی ہجر کا شمار کیوں ہے

طوافِ کعبہ کی گہما گہمی سرور طیبہ کے رت جگوں کا
ابھی تو یادوں کے گل ہیں تازہ ابھی زوالِ بہار کیوں ہے

ابھی تو ساغر چھلک رہے ہیں ابھی سے اترا خمار کیوں ہے

ابھی تو سانسوں میں موجزن ہے مہک مدینے کے بام و در کی
ابھی کیوں آنسو چھلک رہے ہیں ابھی سے خوں میں فشار کیوں ہے

ابھی نہ آنکھوں سے خون برسا ابھی تو محبوؔب کچھ صبر کر
ابھی تو گنتی کے دن ہیں گزرے ابھی سے اختر شمار کیوں ہے

متعلقہ مضامین

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

متعلقہ