نعت شریف

عدم سے لائی ہے ہستی میں آرزوئے_رسولؐ

عدم سے لائی ہے

عدم سے لائی ہے ہستی میں آرزوئے رسولﷺ

عدم سے لائی ہے ہستی میں آرزوئے رسولﷺ

کہاں کہاں لیے پھرتی ہے جستجوئے رسولﷺ

خوشا وہ دل کہ ہو جس دل میں آرزوئے رسولﷺ

خوشا وہ آنکھ جو ہو محو حسن روئے رسولﷺ

تلاش نقش کف پائے مصطفیﷺ کی قسم

چنے ہیں آنکھوں سے ذرات خاک کوئے رسولﷺ

پھر ان کے نشئہ عرفاں کا پوچھنا کیا ہے

جو پی چکے ہیں ازل میں مئے سبوئے رسولﷺ

بلائیں لوں تری اے جذب شوق صل علی

کہ آج دامن دل کھچ رہا ہے سوئے رسولﷺ

شگفتہ گلشن زہرا کا ہر گل تر ہے

کسی میں رنگ علی اور کسی میں بوئے رسولﷺ

عجب تماشا ہو میدان حشر میں بیدم

کہ سب ہوں پیش خدا اور میں روبروئے رسولﷺ

شاعر: بیدم وارثی

Adam Se Layi Hai

Adam Se Layi Hai Hasti Main Arzoo E Rasool

Na Karo Juda Khuda Ra Mujhe Apne Aastaan Sy

Barqe Jamal E Yaar Ne Rakhte Sakoon Jala Diya

Aai Naseeme E Ko E Muhammad

Mera Dil Aur Meri Jaan Madeene Wale

Kaaba-E-Dil Qibla-E-Jaan Taaqe Abrooye Ali

Tum Jo Chaho To Mere Dard Ka Darmaan Ho Jee

Kaaba Ka Shouq He Na Sanam Khana Chahiye

Kash Muj Par He Mujhe Yaar Ka Dhoka Ho Jai

Ada Pe Teri Dil He Aane K Qabi

Kiya Poochte Ho Garmi E Bazar E Mustafa

Khuda Jane Kahan Se Jalwa E Jaana Kahan Tak He

Kaash Meri Jabeen E Shouq Sajdoon Se Sarfaraz Ho

Kon Sa Ghar He Ke Ae Jaan Nahin Kashana Tera

He Roz E Alast Se Apni Sada Waris Mujh Main Mein Waris Main

Khinchi He Tasawar Mein Tasveer Hum Aaghoshi

Sahara Mojon Ka Le Le Ke Barh Raha Houn Mein

Na Mehrab E Haram Samjhe Na Jane Taaq E Butkhana

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button