Wednesday, April 17, 2024
Homeاسلامنعت شریفعارضِ شمس و قمر سے بھی ہیں انور ایڑیاں

عارضِ شمس و قمر سے بھی ہیں انور ایڑیاں

عارضِ شمس و قمر سے بھی ہیں انور ایڑیاں

عرش کی آنکھوں کے تارے ہیں وہ خوشتر ایڑیاں

جاں بجا پر تو فگن ہیں آسماں پر ایڑیاں

دن کو ہیں خورشید شب کو ماہ و اختر ایڑیاں

نجم گردوں تو نظر آتے ہیں چھوٹے اور وہ پاؤں

عرش پر پھر کیوں نہ ہوں محسوس لاغر ایڑیاں

دب کے زیرِ پا نہ گنجائش سمانے کو رہی

بن گیا جلوہ کفِ پا کا ابھر کر ایڑیاں

ان کا منگتا پاؤں سے ٹھکرادے وہ دنیا کا تاج

جس کی خاطر مرگئے منعم رگڑ کر ایڑیاں

دو قمر دو پنجئےخور دو ستارے دس ہلال

ان کے تلوے پنجے ناخن پائے اطہر ایڑیاں

ہائے اس پتھر سے اس سینہ کی قسمت پھوڑیے

بے تکلف جس کے دل میں یوں کریں گھر ایڑیاں

تاج روح القدس کے موتی جسے سجدہ کریں

رکھتی ہیں واللہ وہ پاکیزہ گوہر ایڑیاں

ایک ٹھوکر میں احد کا زلزلہ جاتا رہا

رکھتی ہیں کتنا وقار اللہ اکبر ایڑیاں

چرخ پر چڑھتے ہی چاندی میں سیاہی آگئی

کرچکی ہے بدر کو ٹکسال باہر ایڑیاں

اے رضا طوفان محشر کے طلاطم سے نہ ڈر

شاد ہو ہیں کشتیِ امت کو لنگر ایڑیاں

Aarize Shamso Qamar Se Bhi Hain Anwar Ediyaan – Ala-Hazrat Naat Lyrics In Urdu

Aarize Shamso Qamar Se Bhi Hain Anwar Ediyaan
Arsh Ki Aankhon Ke Taare Hain Woh Khushtar Ediyaan

Jaa Bajaa Partau Figan Hain Aasmaan Par Ediyaan
Din Ko Hain Khursheed Shab Ko Maaho Akhtar Ediyaan

Najme Gardoo(N) To Nazar Aate Hain Chote Aur Woh Paau
Arsh Par Phir Kyun Na Ho(N) Mahsoos Laagar Ediyaan

Dab Ke Zere Paa Na Gunjaaish Samane Ko Rahi
Ban Gaya Jalwa Kafe Paa Ka Ubhar Ka Ediyaan

Unka Mangta Paau Se Thukra De Woh Duniya Ka Taj
Jis Ki Khatir Mar Gaye Mun’am Ragad Kar Ediyaan

Do Qamar, Do Panjaye Khur, Do Sitaare, Dus Hilaal
Unke Talwe, Panje, Nakhun, Paaye Athar Ediyaan

Haaye Us Patthar Se Us Seene Ki Qismat Fodiye
Be Takalluf Jis Ke Dil Mein Yun Karen Ghar Ediyaan

Taaje Roohul Quds Ke Moti Jise Sajda Karen
Rakhti Hain Wallah Woh Paakeeza Gohar Ediyaan

Ek Thokar Me Uhud Ka Zalzala Jaata Raha
Rakhti Hain Kitna Waqaar Allahu Akbar Ediyaan

Charkh Par Chadte Hi Chandi Mein Siyahi Aa Gayi

Kar Chuki Hai Badr Ko Taksaal Bahar Ediyaan

Aye Raza Toofane Mehshar Ke Talatum Se Na Dar
Shaad Ho! Hain Kashtiye Ummat Ko Langar Ediyaan

 

 

Aarize Shamso Qamar Se Bhi Hain Anwar Ediyaan
Arsh Ki Aankhon Ke Taare Hain Woh Khushtar Ediyaan

متعلقہ مضامین

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

متعلقہ