start birds breeding as a side businesshttps://pixabay.com 808

کم سرمایہ کاری سے شروع ھونے والا کاروبار،گھروں میں پرندے پالیں

بے شک اللہ تعالی نے زمین پر کوئی بھی چیز بے کار پیدا نہیں کی جس سے انسان کو بالواسطہ یا بلاواسطہ فائدہ نہ پہنچاتا ھو ان میں سے اکثر چیز یں اللہ تعالی نے ایسی بنائی ہیں جو ڈائریکٹ انسان کو فائدہ پہنچاتی ھیں اور کچھ انسان نے اپنی سہولت کے لیے اللہ کے دیے ھوے عقل سے اپنی سہولت کے لیے بنا لی
اللہ تعالی کی بنائی ھوی چیز کو قدرت کہتے ھیں. انہی میں سے اک چیز خوبصورت پرندے ھیں
میں سمجھتا ھوں آج کل کے ڈیپریشن کے دور میں اپنی صحت کے لیے ضروری احتیاطی تدابیر اپنا کے اپنے گھروں میں پرندے پالنا معاشی فائدہ کے ساتھ ساتھ طبی فائدہ بھی ھو سکتاہے ھے کیونکہ انکے ساتھ جو وقت انسان بیتاتا ھے ان لمحے کم ازکم دوسری تفکرات و پریشانیاں بھول جاتا ھے جو کہ بلڈ پریشر اور ڈیپریشن میں کافی فائدہ مند ثابت ھو سکتاہے
انکو گھروں میں پالنے سے گھر کی خوبصورتی ماحول میں رنگینی کا احساس ھوتا ھے.
یہ تو ھو گئی انکے پالنے سے ماحول کی رونق گھروں کی خوبصورتی اور طبیعت مین خوشگواری کا احساس. اب آتے ھیں
کیا انکےپالنے سےآمدنی میں اضافہ بھی کیا جا سکتا ھے.؟
یا یہ ایک نفع بخش کاروباربھی ھو سکتاہے..؟

بلکل ایسا ھو سکتا..! پاکستان میں خاص طورپر حیدرآباد کراچی میں یہ کام ایک گھریلو انڈسٹری کا درجہ حاصل کر چکا ھے اور چائنہ کے ساتھ معائدہ سی پیک کی بدولت جہاں پاکستان میں کچھ کاروبار ایسے ھیں جوسی پیک کی بدولت ختم ہونے یا محدود ھو جانے کا اندیشہ ھے.
لیکن سی پیک کی بدولت برڈ فارمنگ اور ہیچری کے کاروبار کو غیر معمولی ترقی ملنے کے امکانات ھیں.
اس کام کو آپ بارٹ ٹائم کے طور پرکم جگہ پر یا گھروں کی چھتوں پےدھوپ سردی وغیرہ کا مناسب انتطام کر کے پھی کرسکتےہیں ملازمت میں ھم 8 سے 10 گھنٹے کام کرتے ھیں اس میں مشقت اور بسوں کے دھکے بھی کھاتے ھیں اگر ھم گھر میں 2سے3 گھنٹے کام کر کے اپنی تنخواہ سے بھی ذیادہ کما لیں اور اس آمدنی کو برھانے کا موقع بھی ھو تو ایسا کاروبار کرنا یقیا” عقلمندانہ فیصلہ ھو گا.کچھ دوست کہتے ھیں کہ مجھے پرندے پالنے کاسوق نہیں ھے. اس کا جواب.
یہ کام اسلام میں جائز ھے.؟ کتنی رقم سے شروع کر سکتےہیں
بات ھو رہی تھی پرندے پالنے کی کھ کچھ دوستوں کا کہنا ھے کہ مجھے پرندے پالنے کا شوق نہیں ہے
تو نوکری (غلامی)اور ملازمت کیلئے بسوں میں دھکے کھانے اور دفتروں کے چکر لگانے کا کسے شوق ھوتا ھے.؟ لیکن کمانے کیلئے مجبورا”کر رھے ہیں برڈ فارمنگ کا کاروبار بھی گھر چلانے کیلئے کیا جا سکتا ھے اور بھت سے دوست ایسا کر بھی رھے ہیں.
اور یہی حقیقت ہے جس کاروبار سے کمائی ہوتی ہے تو شوق خودبخود پیدا ہو جاتا ھے باقی ذوق اور شوق سے یہ کام کیا جائے تو بہت جلد آپ اس قابل ھو جائیں گے کہ آپ دوسروں کو بھی اس کاروبار کو شروع کرنے کا مشورہ دے رہے ہونگے انشاءاللہ..!

کچھ دوستوں کا خیال ھے کہ پرندوں کو قید کرنا یا انکا کاروبار کرنا ناجائز ھے اسلام میں. تو اس حوالے سے میرے اسی فیس بک پیج پر احادیث کے حوالے سے اک تفصیلی پوسٹ موجود ہے اسے پڑھ لینے سے انشاءاللہ اس حوالے سے بھی تسلی ھو جائے گی
اب سوال یہ پیدا ہوتا ھے کہ اس کاروبار کو شروع کرنے کیلئے کتنی رقم درکار ہے..؟
تو جناب یہ کام آپ پانچ سے دس ھزار میں بھی شروع کر سکتےہیں اور لاکھوں سے بھی یعنی” جنتا گڑ اتنا میٹھا”
اب یہ کہ نقصان نہ ھو جاے.؟
دیکھو کئی دفعہ سنا ھے کہ کسی نے جاب کیلئے کسی کو لاکھوں روپے دیے اس کے ساتھ فراڈ ہو گیا کسی نے کرڑوں روپے کا کاروبار کیا کچھ ہی عرصہ کے بعد ناکام ھو گیا اور کسی نے بیرون ملک جانے کیلئے پیسے دیے فراڈ ھو گیا یہاں تک کئی لوگ باہر جانے ک چکر میں زندگیاں گنوا بیٹھے تو سوال ہی پیدا ھوتا ھے کہ
یہ کاروبار کیوں نہیں…؟
آپ اس کاروبار سے بھی بہت کچھ کما سکتے ہیں

دوستو بات ہو رہی تھی اس کام کو بطور بزنس کرنے کی اور شروع شروع میں کونسے پرندے رکھینے کی
میرے وہ دوست جنہوں نے پہلے سے ہی برڈز رکھے ھوے ھیں انکو تو اب تجربہ ھو چکا ھےلیکن جو نئے ھیں اس کام میں تو ان کے لیے میرا مشورہ یہی ھے کہ آپ اگر اس کام کو بزنس کے طورپر کرنا چاہتے ھیں تو سب سے پہلے آپ 5یا10 جوڑے بجری/آسٹریلین طوطوں کے لگائیں جب آپ ان سے ایک دو بریڈ لیں اپ کو تجربہ ھو جائے پھر آپ 40 سے 50 جوڑے لگایں اسی طرح پھر ورائٹی بڑھاتے جائیں اک دن آپ را. افریکن گرے. مکاو. اور کاکاٹو تک پہنچ جائیں گے انشاءاللہ
لیکن سب سے اھم بات یہ کاروبار شروع کرنے سےپہلے آپ کسی ایکسپرٹ سے رابطہ ضرور رکھیں اس سے آپ کا نقصان نہیں ھو گا اور رہنمائی ھوتی رھے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں