Wednesday, April 17, 2024
Homeاسلامنعت شریفنہ کلیم کا تصور نہ خیالِ طور سینا  

نہ کلیم کا تصور نہ خیالِ طور سینا  

نہ کلیم کا تصور  نہ خیالِ طور سینا  

نہ کلیم کا تصور     نہ خیالِ طور سینا

میری آرزو محمد    میری جستجو مدینہ

میں گدائے مصطفی ہوں    میری عظمتیں نہ پوچھو

مجھے دیکھ کر جہنم کو بھی آگیا پسینہ

مجھے دشمنو نہ چھیڑو    میرا ہے کوئی جہاں میں

میں ابھی پکار لوں گا    نہیں دور ہے مدینہ

سوا اِس کے میرے دل میں    کوئی آرزو نہیں ہے

مجھے موت بھی جو آئے تو ہو سامنے مدینہ

میرے ڈوبنے میں باقی    نہ کوئی کسر رہی تھی

کہا المدد محمد تو ابھر گیا سفینہ

میں مریض مصطفی ہوں مجھے چھیڑو نہ طبیبو

میری زندگی جو چاہو مجھے لے چلو مدینہ

کبھی اے شکیل دل سے نہ مٹے خیال احمد

اسی آرزو میں مرنا    اسی آرزو میں جینا

متعلقہ مضامین

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

متعلقہ