amazing health benefits of honey 125

شہد سے معدہ کے امراض کا علاج

شہد اور امراض معدہ

شہد معدہ کا دوست ہے۔ اس سے معدہ کی تیزابی کیفیت میں کمی آ جاتی ہے۔ شکم اور آنتوں کی بیماریوں قرمہ معدہ (السر) اور ورم معدہ میں بہت ہی کار آمد ہے۔ روس نے 100 مریضوں پر تجربہ سے ثابت کیا ہے کہ ان مریضوں کے تیزابی کیفیت معدہ کی جلن، اینٹھن اور زخم اچھے ہو گئے۔
معدہ کے نروس سسٹم پر خاص طور پر بہتر اثر ہوتا ہے۔ معدہ کے زخموں کے لئے غذا کے دو تین گھنٹے قبل یا بعد استعمال کیا جانا چاہئیے۔
نیز ایسے مریضوں کو طب نبوی کی روشنی میں صبح اٹھتے ہی دو بڑے چمچے شہد کا شربت ناشتہ میں جو کا دلیا، شہد ڈال کر اور عصر کے وقت شہد کا شربت دیا جائے۔ اتنا ہی علاج کافی ہو جاتا ہے جہاں تکلیف اور کمزوری زیادہ ہو وہاب بہی دانہ کا لعاب نکال کر اس میں شہد ملا کر ہر دو گھنٹے کے بعد گھونٹ گھونٹ پلایا جائے۔ اللہ عزوجل کے فضل و کرم سے ناکامی نہ ہو گی۔ چونکہ زیتون کا تیل بھی زخموں کو مندمل کرنے اور پیٹ کی تیزابیت کو مارنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس لئے دن کے گیارہ بجے اور رات سوتے وقت ایک سے تین بڑے چمچے زیتون کا تیل بھی دیا جائے۔ نہار منہ شہد پینے سے پیٹ کی ہوا نکل جاتی ہے۔

شہد اور امراض جگر و یرقان

جگر کے پتھالوجیکل امور مثلاً کاربوہائیڈریٹ، پروٹین، فیٹس، وٹامن اور ہارمونس کی تبدیلیوں میں نمایاں کام انجام دیتا ہے۔ جگر کے ذخیرہ گلائیکو جن میں نمایاں اضافہ ہوتا ہے۔
جگر اور پتہ کی خرابیاں اور وائرس کی وجہ سے سوزش یرقان کا باعث ہوتے ہیں۔ شراب نوشی کی وجہ سے جگر خراب ہو جاتا ہے۔ یہی خرابی استسقاء اور Chirrhosis کی وجہ سے شکار ہو جاتے ہیں۔ ایسے تمام مریضوں کو ابلے ہوئے پانی یا بارش کے پانی میں شہد دیا گیا۔ شہد کی مقدار بیمار کی شدت کے مطابق بڑھائی گئی۔ جگر کی بیماریوں میں شہد اور مولی کا رس 100 تا 150 گرام ورنہ کھانا مفید ہے۔

مزید پڑھیں  چمکدار، گھنے اور ہموار بالوں کے نئے دیسی ٹوٹکے
کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

شہد سے معدہ کے امراض کا علاج” ایک تبصرہ

  1. 2014سے ھمارامعدہ خراب ھے بہت علاج کئے کیوں فائدہ نھیں ھوا اگر اپ کے پاس کوئی علاج ھو تو ای میل پہ سینڈ کرو

اپنا تبصرہ بھیجیں