business experience 72

کاروبار میں تجربے کی اہمیت

کاروبارکے لیئےایک سوال اکثر پوچھا جاتا ھے
“میرے پاس اتنے پیسے ھیں میں کیا کروں ”
یہ سوال ھی بچگانہ ھے !
کاروبار کرنے کے لیئے سب سے پہلی شرط تجربہ ھے ۔
اس کے بعد صلاحیت،
اس کے بعد تعلقات،
،پھر محنتی ھونا اور اچھی نیت،
اب نمبر آتا ھے انویسٹمنٹ کا ـ
تجربے کے بغیر کوئی بھی کام کیا جائے تو نوے فیصد چانس ھے کہ نقصان ھو گا اور نتیجتاٰ کام چھوڑنا پڑے گا اور تجربہ کتابیں پڑھنے سے نہیں آتا بلکہ عملی میدان میں اترنے سے آتا ھے ،جو چیزیں کاروبار کے لئے ایک بڑے کالج میں بھاری فیسیں لے کر پڑھائی جاتی ھیں ھمارے شاہ عالم مارکیٹ ،اوردوسری بڑی مارکیٹوں کے شیخ صاحب اپنے سولہ سالہ لڑکے کودوکان پر سکھا چکے ھوتے ھیں،اب سوال یہ ھے کہ تجربہ کیسے حاصل کیا جائے تو اس کے بہت سے طریقے ھیں سب سے آسان کہ پہلے اپنی صلاحیت کے مطابق اپنا کام کا انتخاب کریں اور پھر اس کام کے کسی بڑے دوکاندار کے پاس ملازمت کر لیں چاھے بغیر تنخواہ کے کیوں نہ کرنا پڑے کیوں کہ تجربہ حاصل کرنے کے لیئے لاکھوں بھی لگانے پڑیں تو نقصان نہیں ،دوسرا اس کام کو چھوٹے پیمانے پر شروع کیا جائے اور پہلے کچھ وقت کے لیئے نفع کی امید نہ رکھی جائے ،اگر نقصان بھی ھو جائے تو مایوس نہ ھو بلکہ مستقل مزاجی سے کام کرتا رھے
کاروبار کے لیئے تعلقات کا ھونا بہت اھم ھے ،تعلقات ایسی چیز ھیں کہ تعلقات کے زریعے بغیر پیسوں کے بھی کام چل جاتا ھے مثال کے طور پر میں نے کچھ دیر مصری شاہ میں سکریپ کا کام بھی کیا ھے،تانبے کا خالص سکریپ اٹھاتا تھا اور فیکٹری سپلائی دیتا تھا ،دراصل سکریپ کا کام ھمارا جدی پشتی کام ھے ،میرے دادا اور تایا جی کا بہت نام تھا مارکیٹ میں ،جب میں نے کام شروع کیا تو جب کسی پرانے دوکاندار سے مال اٹھاتا اور اس کو پتا لگتا کہ میں حاجی نور محمد کا پوتا ھوں یا حاجی سلیم ،امین کا بھتیجا ھوں تو بہت عزت کرتے اگر پاس پیسے نہ بھی ھوتے تو کہتے کہ مال لے جاؤ پیسے آ جائیں گے
پاکستان میں ٹیلنٹ کی کمی نہیں ھے ،کمی ھے تو صرف محنت کی ،سستی جس بھی شعبے میں ھو چاھے دین میں یا دنیا میں ھمیشہ نقصان دیتی ھےاور جو محنتی ھیں تو نیت کی خرابی کا مسئلہ آ جاتا ھے ،سستی کا علاج ھے چستی ،اپنے آپ کو فارغ مت رکھیں ،دوکان ،کارخانے میں نئی نئی چیزیں سوچیں ،کام کو کیسے بڑھایا جائے اس کے متعلق ھلکا پھلکا تجربہ کرتے رھیں
اب ان کاموں کو کرنے والے بندے کوانویسٹمنٹ کے لیئے کڑوڑوں روپیہ بھی کم ھے ،اس کے سامنے بہت بڑا میدان ھو گا
اب سوال یہ ھو گا کہ کام کو کیسے بڑھاؤں نہ کہ پیسوں کو کہاں لگاؤں
کاروبار آپ کے ارد گرد موجود ھے اور بہت زیادہ موجود ھے اب یہ آپ کے اوپر ھے کہ اس میں سے کتنا حاصل کرتے ھیں
ایمانداری اور سچائی کے ساتھ محنت کریں ،اللہ کی مدد آپ کے ساتھ ھے
توصیف ملک

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں